وفاق میں نگران حکومت آتے ہی حفیظ الرحمان کو گھربھیج دینگے،جاویدحسین
  16  مئی‬‮  2018     |     گلگت بلتستان

استور(اوصاف نیوز ) پیپلز پارٹی کے رکن اسمبلی جاوید حسین نے کہا کہ وفاق میں نگراں حکومت آنے کے بعد پہلے مرحلے پر متحدہ اپوزیشن عدم اعتماد کی تحریک کو مضبوط بنانے کے حوالے سے کام کرے گی دوسرے مرحلے میں قاری حفیظ کے خلاف عدم اہتماد لیکر ان کو اس کے آقا کی طرح گھر بھیج دینگے اور انشا اللہ اس وقت حفیظ بھی گلگت کی گلیوں میں کیوں نکالا کا رٹ لگاتے رہینگے اس عدم اعتماد کی تحریک میں 8 سے10 اراکین اسمبلی ن لیگ کے ہونگے اگلا وزیر اعلی کا پہلا آپشن دیامر اور دوسرا آپشن بلتستان ہوگا انہوں نے کہا کہ عدم اعتماد کی تحریک ہم نہیں لا رہے ہیں بلکہ اس کیس کو ہم نے عوامی عدالت میں لیکر گئے تھے اور عوام عدالت سے اس کیس کو قبول کیا اور حفیظ الرحمن کا گھر بھیجنے کا وعدہ لیا ہے کیونکہ اس لئے ہم ان کے خلاف عدم اعتماد لا رہے ہیں کہ انہوں نے سرتاج عزیز کمیٹی کے سفارشات کو کشمیری وزیر اعظم سے ملی بگھت کے بعد فائیل غایب کردیا جن سے مسلم لیگ کے اپنے اراکین بھی نالاں ہیں حفیظ نے گلگت بلتستان کی عوام کو غلامانہ نظام کی طرف لے جانے کے لئے ایک سازش کے تحت کشمیری قیادت کے اشاروں پر اس آرڈنینس کو ہمارے اوپر مسلط کرنے کی کوشش کیا ہے جو کہ گلگت بلتستان کے با شعور نوجوانوں کو کسی صورت قابل قبول نہیں ہوگا انہوں نے مزید کہا کہ وزیر اعلی کوئی جمہوری انداز میں حکومت نہیں چلا رہا یے بلکہ چند نا معلوم غیر منتخب لوگوں کو اپنے ساتھ بیٹھا کر کرپشن اور لوٹ مار کر رہا ہے کوئی منتخب ممبر اس وقت حفیظ کی ان غلط پالیسیوں سے خوش نہیں ہے موقعے پر انتظار ہے انشا اللہ وہ دن دور نہیں جب حفیظ کیوں نکالا کہہ کر گھر چلے جاینگے انہوں نے مزید کہا کہ حفیظ خود فرقہ واریت کا دوسرا نام ہے

جب یہ اقتدارمیں آیا حالات ٹھیک ہوے اس سے پہلے عوامی مینڈیٹ حاصل کرنے کے لئے حالات خود خراب کرا کر سیاسی دوکان چمکا رہا تھا اب تو یہاں کی عوام حفیظ الرحمن کی ایک ایک غلط اور گہری سازش سے آشناں ہو چکے ہیں جس کا عملی ثبوت انشا اللہ جلد از جلد ملے گا جاوید حسین کا مزید کہنا تھا کہ جب اپوزیشن کے اراکین آواز اٹھاتے ہیں تو حفیظ فوراً مذہبی رنگ دینا شروع کرتا ہے ہم ان سے ہوچھنا چاہتے ہیں کہ اگر ایک ہی سیکٹ کا کام کرنا ہے تو دیامر کے لوگوں کو دیوار سے کیوں لگایا جا رہا ہے حفیظ گلگت بلتستان کا وزیر اعلی تو نہیں ہے البتہ ایک ہی محلے کا وزیر اعلی کا جو صرف ٹھکیوں میں کرپشن کر کے پیسہ کمانا اور پرچیوں کے ذریعے نوکریاں دلانا جس ترقی کی حفیظ بات کر رہا ہے وہ ترقی گلگت بلتستان میں چند ٹھکیداروں کے لئے ہو رہی ہے کیونکہ ان کے زریعے بڑا پیسہ بنا سکے لیکن اس بہتی گنگا میں حفیظ جس طرح سے لوٹ مار کر رہا ہے اس کا ہم واپس حساب لینگے تو ان کو احتساب کے کٹہرے میں کھڑا کرینگے۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں






     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved